صارف کا بل نئے کنکشن کا طریقہ کار نئے کنکشن میرٹ لسٹ لوڈ مینیجمنٹ شیڈول استفسارات ٹینڈر کمپنی دفاتر صحت، حفاظت اور ماحولیات
banner

بورڈ آف ڈائریکٹرز

Profile-Image

جناب اسماعیل قریشی

چیئرمین

جناب محمد اسماعیل قریشی دسمبر 2016ء تک نیشنل اسکول آف پبلک پالیسی (این ایس پی پی) کے ریکٹر تھے۔ وہ عوامی خدمت اور ترقی میں 35 سال سے زیادہ کا تجربہ رکھتے ہیں۔ انہوں نے حکومت پاکستان میں بہت سے اعلی عہدوں پر خدمات انجام دیں جن میں سیکریٹری، اسٹیبلشمنٹ ڈویژن / چیئرمین، بورڈ آف ٹرسٹیز، فیڈرل بینولینٹ فنڈ اینڈ گروپ انشورنس، سیکرٹری، وزارت پانی و بجلی؛ سیکرٹری، وزارت خوراک، زراعت اور لائیو سٹاک، ایڈیشنل فنانس سیکرٹری (ایکسٹرنل فنانس اینڈ پالیسی)، وزارت خزانہ، پاکستانی سفارت خانہ پیرس میں وزیر تجارت، ڈائریکٹر جنرل لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی، ایڈیشنل سیکرٹری فنانس ڈپارٹمنٹ، حکومت پنجاب، اور سیکرٹری صحت و آبادی، حکومت پنجاب شامل ہیں۔
جناب اسماعیل قریشی عالمی بینک کی کثیر الجہتی سرمایہ کاری گارنٹی ایجنسی (ایم آئی جی اے) کے متبادل گورنر رہ چکے ہیں۔ نیشنل کمیشن فار ہیومن ڈیولپمنٹ (این سی ایچ ڈی) کے مستقل رکن؛ اور پاکستان پاورٹی ایلیوئیشن فنڈ (پی پی اے ایف) کی جنرل باڈی کے ممبر ہیں۔ وہ اقوام متحدہ کے چارٹر کے تحت چین، بھارت، بنگلہ دیش، افغانستان، میانمار اور پاکستان کے پہاڑی علاقوں کی علاقائی ایجنسی آئی سی آئی ایم او ڈی کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے چیئرمین رہ چکے ہیں۔ انہوں نے اقوام متحدہ کی فوڈ اینڈ ایگریکلچر آرگنائزیشن (ایف اے او) کی گورننگ باڈی کونسل کے وائس چیئرمین کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دیں۔ وہ حکومت پاکستان کے پے اینڈ پنشن کمیشن (2010) کے رکن بھی رہے۔ انہوں نے پاک بھارت آبی تنازع میں حکومت پاکستان کے وفد کی قیادت بھی کی اور جنیوا اور ہانگ کانگ میں ڈبلیو ٹی او کے دوحہ ڈیولپمنٹ راؤنڈ مذاکرات میں پاکستانی وفد کے رکن بھی رہ چکے ہیں۔ وہ نیسپاک (نیشنل انجینئرنگ سروسز پاکستان)، حبیب بینک (پاکستان کا دوسرا سب سے بڑا بینک) کے بورڈ آف گورنرز کے چیئرمین بھی رہ چکے ہیں۔ جناب اسماعیل قریشی سرگودھا میں پیدا ہوئے، انہوں نے لاء اور ماسٹر ڈگری کے علاوہ برمنگھم یونیورسٹی برطانیہ سے ڈیولپمنٹ ایڈمنسٹریشن میں پوسٹ گریجویشن کیا ہے۔آپ بہت سی رفاہی تنظیموں سے بھی وابستہ رہے ہیں۔

MD

جناب عامر طفیل

چیف ایگزیکٹو/مینیجنگ ڈائریکٹر

جناب عامر طفیل، مینیجنگ ڈائریکٹر سوئی ناردرن گیس پائپ لائنز لمیٹڈ، پیشے کے لحاظ سے چارٹرڈ اکائونٹنٹ اور انسٹیٹیوٹ آف چارٹرڈ اکائونٹنٹس آف پاکستان کے رکن ہیں۔ آپ نے ۲۰۰۴ میں SNGPL شمولیت اختیار کی اور ڈپٹی مینیجنگ ڈائریکٹر سمیت کلیدی انتظامی عہدوں پر فائز رہے۔ SNGPL میں شمولیت سے قبل آپ اندرون ملک اور بیرون ملک، ملکی و بین الاقوامی تنظیموں اور مالیاتی اداروں کے مختلف شعبوں میں ۲۸ سالہ وسیع تجربہ کے حامل ہیں۔

Profile-Image

جناب احمد چنائے

ڈائریکٹر

جناب احمد چنائے، ہلال امتیاز (ایچ آئی)، ستارہ امتیاز (ایس آئی)، سوئی ناردرن گیس پائپ لائنز لمیٹڈ اور پاکستان اسٹاک ایکسچینج لمیٹڈ (پی ایس ایکس) کے بورڈ کے منتخب ڈائریکٹر ہیں۔ وہ آرک گروپ آف کمپنیز کے منیجنگ پارٹنر ہیں اور سرمایہ کاری، ٹیکسٹائل، رئیل اسٹیٹ اور پولٹری فارمنگ جیسے مختلف کاروباروں کی نگرانی میں مصروف ہیں۔ جناب چنائے انسٹی ٹیوٹ آف کاسٹ اینڈ مینجمنٹ اکاؤنٹنٹس آف پاکستان (آئی سی ایم اے پی) سے کوالیفائیڈ ہیں اور جامعہ کراچی سے کامرس میں گریجویٹ کی ڈگری رکھتے ہیں۔ وہ پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف کارپوریٹ گورننس سے سرٹیفائیڈ ڈائریکٹر بھی ہیں۔ مسٹر چنائے پاکستان کی ایک ممتاز کاروباری اور سماجی شخصیت ہیں۔ انہوں نے کاروبار، تعلیم، صحت، جرائم کی روک تھام اور دیگر سماجی خدمات کے شعبوں میں مختلف حیثیتوں میں معاشرے کی خدمت کی ہے اور ان شعبوں میں قوم کے لئے گراں قدر خدمات انجام دی ہیں۔ انہوں نے سال 2010 سے 2015 تک سٹیزن پولیس رابطہ کمیٹی، سندھ (جرائم کی روک تھام کے لئے شہریوں کا ادارہ) کے سربراہ کی حیثیت سے کامیابی سے خدمات انجام دیں۔ وہ مختلف ہسپتالوں اور تعلیمی اداروں کے بورڈز میں بھی فعال طور پر خدمات انجام دے رہے ہیں اور آل پاکستان میمن فیڈریشن کے صدر کی حیثیت سے میمن کمیونٹی کی قیادت کر رہے ہیں۔ وہ کئی بار فیڈریشن آف پاکستان چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کی مینیجنگ کمیٹی میں بھی خدمات انجام دے چکے ہیں اور پاکستان کلاتھ مرچنٹس ایسوسی ایشن (ٹیکسٹائل برآمد کنندگان کی سب سے بڑی تنظیم) کے چیئرمین بھی رہ چکے ہیں۔ پاکستان کے عوام کے لئے ان کی خدمات کے اعتراف میں انہیں ہلال امتیاز (ایچ آئی) اور ستارہ امتیاز (ایس آئی) کے باوقار قومی اعزازات سے نوازا جا چکا ہے۔ جناب چنائے کو پی ایس ایکس نے سینٹرل ڈپازٹری کمپنی آف پاکستان لمیٹڈ، نیشنل کلیئرنگ کمپنی آف پاکستان لمیٹڈ اور پاکستان مرکنٹائل ایکسچینج لمیٹڈ کے بورڈز میں ڈائریکٹر کی حیثیت سے خدمات انجام دینے کے لئے نامزد کیا ہے۔ اس کے علاوہ وہ مختلف نجی اور سماجی اداروں کے بورڈز میں بھی خدمات انجام دے رہے ہیں۔

Profile-Image

جناب علی طاہر

ڈائریکٹر

جناب علی طاہر اپنے تیس سالہ کیریئر میں سرکاری، نجی اور ترقیاتی شعبوں میں کام کرنے کا وسیع اور متنوع تجربہ رکھتے ہیں۔ انہوں نے پاکستان ایڈمنسٹریٹو سروس کے ایک افسر کی حیثیت سے بلوچستان میں قلات اور مستونگ کے دور افتادہ ذیلی ڈویژنوں اور پھر پنجاب کے شہری علاقے لاہور میں اپنی خدمات کے ابتدائی سالوں میں ایڈمنسٹریٹر کی حیثیت سے کام کیا۔ ان کی سینئر سطح کی اہم ذمہ داریوں میں حکومت پنجاب کے سیکرٹری، پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ، فنانس اور پروفیشنل ڈویلپمنٹ شامل ییں۔ آپ ایڈیشنل چیف سیکرٹری کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دے چکے ہیں۔ 2016 سے 2020 تک جناب طاہر واشنگٹن ڈی سی میں پاکستان کے اقتصادی اور تجارتی وزیر تھے۔ اس حیثیت سے انہوں نے آئی ایف آئیز، ٹیکسیشن، زراعت، کوآپریٹوز، مینجمنٹ، ملٹی لیٹرل آرگنائزیشنز، تھنک ٹینکس، امریکی حکومتی ایجنسیوں، تجارتی اداروں اور چیمبرز کے ساتھ قریبی رابطے رکھے۔ ۔ انہوں نے بین الحکومتی تنظیم انٹرنیشنل کمیٹی (آئی سی اے سی) کی صدارت کی اور سول سروس میں شامل ہونے سے پہلے کارپوریٹ سیکٹر میں اور ترقیاتی شعبے میں کام کیا۔
جناب طاہر نے مانچسٹر سے فلسفہ، سیاست اور معاشیات میں بی اے (آنرز) اور آکسفورڈ یونیورسٹی سے ایم اے (معاشیات) کیا ہے۔ وہ وقتا فوقتا قومی اخبارات میں بھی اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہیں۔

Profile-Image

جناب عارف سعید

ڈائریکٹر

جناب عارف سعید نے آکسفورڈ یونیورسٹی سے گریجویشن کی۔ وہ اس وقت سروس گلوبل فٹ ویئر لمیٹڈ کے چیئرمین اور سروس انڈسٹریز لمیٹڈ کے چیف ایگزیکٹو ہیں۔ وہ انجینئرنگ ڈیولپمنٹ بورڈ (ای ڈی بی) کے چیئرمین اور بورڈ آف سروس لانگ مارچ ٹائرز (پرائیویٹ) لمیٹڈ کے ساتھ ساتھ سرویس فاؤنڈیشن کے ڈائریکٹر کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دے رہے ہیں۔ وہ دارالسلام ٹیکسٹائل ملز لمیٹڈ کے سی ای او رہ چکے ہیں۔ وہ قائد اعظم سولر پاور (پرائیویٹ) لمیٹڈ، قائد اعظم تھرمل پاور (پرائیویٹ) لمیٹڈ اور نیشنل پاور پارکس مینجمنٹ کمپنی (پرائیویٹ) لمیٹڈ کے چیئرمین تھے جس نے سرکاری شعبے میں کامیابی کے ساتھ بجلی کے چار اہم منصوبے قائم کیے۔ جناب عارف سعید ایچی سن کالج کے گورننگ بورڈ میں خدمات انجام دے رہے ہیں اور اس وقت پاکستان رگبی یونین کے صدر ہیں۔ وہ آل پاکستان ٹیکسٹائل ملز ایسوسی ایشن (اپٹما) کے ساتھ ساتھ لاہور اسٹاک ایکسچینج کے چیئرمین بھی رہ چکے ہیں۔ وہ ایس این جی پی ایل کے بورڈ میں آزاد ڈائریکٹر کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دے رہے ہیں۔

Profile-Image

محترمہ فاریہ رحمٰن صلاح الدین

ڈائریکٹر

فاریہ رحمان صلاح الدین ایک سی لیول پروفیشنل ہیں جن کا 24 سال پر محیط کیریئر اے این زیڈ گرینڈ لیز، ایس سی بی، ایچ بی ایل، یو بی ایل اور بینک الفلاح لمیٹڈ جیسے معروف مالیاتی اداروں میں بینکنگ اور انٹرپرینیورشپ کے تجربے اور حال ہی میں لاہور یونیورسٹی آف مینجمنٹ سائنسز (لمز) میں سلیمان داؤد اسکول آف بزنس (ایس ڈی ایس بی) میں ڈائریکٹر پلیسمنٹ کی حیثیت سے خدمات پر مشتمل ہے۔ ان کی مہارت کاروباری امور کی اسٹریٹجک ری الائنمنٹ کے اور ہم آہنگی کے ذریعے تنظیمی تبدیلیاں سرانجام دینے میں مضمر ہے۔
محترمہ فاریہ کا تجربہ مقامی اور علاقائی پبلک اور پرائیویٹ سیکٹر انٹرپرائزز پر پھیلا ہوا ہے جو کارپوریٹ اور ریٹیل بینکنگ کے آپریشنل اور کریڈٹ مینجمنٹ دونوں پہلوؤں کی گہری تفہیم رکھتی ہیں۔ ان کا غیر معمولی تجربہ انہیں اس وقت زیادہ تر اداروں میں رائج ربط کے فقدان کو ختم کرنے کے لئے مثالی بناتا ہے ، جس سے وہ ٹیموں کے رویوں میں تبدیلی لانے ، انہیں ایک مشترکہ پلیٹ فارم پر لانے اور جدت طرازی اور تخلیقی صلاحیتوں کو اجاگر کرنے کے ذریعے کاروباری تبدیلی کی قیادت کرنے کے قابل بنتی ہیں۔
محترمہ فاریہ اپنا وقت لمز ، مختلف افراد، اداروں اور کاروباری اداروں کو مشاورتی خدمات پیش کرنے اور ورثے کی بحالی کے لیے بوتیک ہوٹل پروجیکٹ کا انتظام میں تقسیم کر رہی ہیں۔ وہ دبئی اسلامک بینک کے بورڈ آف ڈائریکٹرز، ایلکوٹ اسپننگ ملز، جی این آر کنسلٹنٹس اور لمز فنانشل ایڈ کمیٹی کی رکن ہونے کے ساتھ ساتھ لاہور بائینل فاؤنڈیشن کی مشیر بھی ہیں۔ ثقافت اور ورثے کے لئے ان کا جذبہ مقامی آرٹ کے ایک بڑے سرپرست اور کلکٹر کے طور پر ان کی ساکھ اور پاکستان کے معروف آرٹ اداروں کے ساتھ ان کی شمولیت سے بھی ظاہر ہوتا ہے۔
محترمہ فاریہ نے لاہور یونیورسٹی آف مینجمنٹ سائنسز (لمز) سے ایم بی اے کیا ہے اور وہ باویریا، جرمنی کے لیے روٹری انٹرنیشنل - جی ایس ای پروفیشنل اسکالر ہیں۔ انہوں نے علامہ اقبال میڈیکل کالج اینڈ جناح ہسپتال (اے آئی ایم سی/ جے ایچ)، سروس انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (سمز)/سروسز ہسپتال،ڈیری رورل ڈیولپمنٹ فاؤنڈیشن(ڈی آر ڈی ایف)، لمز فنانشل ایڈ اینڈ این او پی، مینجمنٹ ایسوسی ایشن آف پاکستان (میپ) اور پاکستان فیشن ڈیزائن کونسل (پی ایف ڈی سی) میں کمیٹی اور بورڈ ممبر کی حیثیت سے اسٹریٹجک ایڈوائزری کی حیثیت سے خدمات انجام دیں۔

Profile-Image

جناب حسن محمود یوسفزئی

ڈائریکٹر

جناب حسن محمود یوسفزئی اس وقت حکومت پاکستان کے ایڈیشنل سیکرٹری پٹرولیم ڈویژن کے طور پر خدمات انجام دے رہے ہیں۔ انہوں نے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف مینجمنٹ، پاکستان اکیڈمی فار رورل ڈویلپمنٹ اور پاکستان پراونشل سروسز اکیڈمی، پشاور کے ڈائریکٹر جنرل کی حیثیت سے خدمات انجام دیں۔ خیبر پختونخوا (کے پی ) میں جناب یوسف زئی نے سیکرٹری ہائر ایجوکیشن ڈپارٹمنٹ، محکمہ ہاؤسنگ، محکمہ اوقاف، لاء اینڈ آرڈر (ضم شدہ علاقہ) اور ایڈمنسٹریشن (اسٹیبلشمنٹ) میں خدمات انجام دیں۔ جناب یوسف زئی فرینکفرٹ، جرمنی میں کمرشل قونصلر، منیجنگ ڈائریکٹر سمال انڈسٹریزکے پی اور کے پی حکومت کے پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ ڈپارٹمنٹ میں چیف اکانومسٹ کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دے چکے ہیں۔ حکومت سے باہر وہ ایشیائی ترقیاتی بینک میں صلاحیت کی ترقی کے ماہر اور باجوڑ ایجنسی میں اسسٹنٹ پولیٹیکل ایجنٹ کی حیثیت سے کام کرنے کا تجربہ رکھتے ہیں۔ اپنے کیریئر کے ابتدائی دنوں میں جناب یوسف زئی نے سوات کے ڈسٹرکٹ کوآرڈینیشن آفیسر کی حیثیت سے خدمات انجام دیں۔ آپ ایڈیشنل سیکرٹری اسٹیبلشمنٹ ڈپارٹمنٹ، چیف سیکرٹری کے پرسنل سٹاف آفیسر اور چترال اور سوات میں اسسٹنٹ کمشنر بھی رہ چکے ہیں۔
انہوں نے 1995 میں سی ایس ایس کا امتحان پاس کیا اور پاکستان ایڈمنسٹریٹو سروس (جسے پہلے ڈی ایم جی کہا جاتا تھا) میں 24 ویں سی ٹی پی میں شمولیت اختیار کی۔ انہوں نے فلبرائٹ فیلو کی حیثیت سے ایسٹرن مینونائٹ یونیورسٹی، امریکہ سے تنازعات کی تبدیلی میں ایم اے کی ڈگری حاصل کی۔ اس وقت وہ پشاور یونیورسٹی کے شعبہ بین الاقوامی تعلقات میں پی ایچ ڈی پروگرام میں زیر تعلیم ہیں۔ انہوں نے اپنی ابتدائی تعلیم کیڈٹ کالج، پیٹارو، پی اے ایف کالج، سرگودھا سے ایف-ایس-سی اور ایروناٹیکل انجینئرنگ کی ڈگری حاصل کی۔ جناب یوسف زئی پشاور یونیورسٹی سے پولیٹیکل سائنس میں ایم اے بھی کر چکے ہیں۔
انہوں نے پاک فضائیہ میں متنوع پیشہ ورانہ تربیتی کورسز اور پروموشن امتحانات، سول سروسز اکیڈمی میں 18 ماہ کے کامن ٹریننگ پروگرام اور اسپیشلائزڈ ٹریڈنگ پروگرام، مڈ کیریئر مینجمنٹ کورس، سینئر مینجمنٹ اور نیشنل مینجمنٹ کورسز، جائیکا ٹریننگ آن ڈیولپمنٹ اسٹڈیز اور چین میں اکنامک ڈیولپمنٹ ٹریننگ میں حصہ لیا ہے۔ جناب یوسف زئی نے سرکاری شعبے سے متعلق شعبوں پر متعدد ملکی اور بین الاقوامی سیمینارز، سرٹیفکیٹ کورسز اور نان ڈگری پروگراموں میں بھی شرکت کی ہے۔ انہوں نے ایشیائی ترقیاتی بینک کے لیے 'مصالحتی انجمنوں کے لیے مینوئل' کا مسودہ بھی تیار کیا ہے اور 'امن کے قیام کا مقامی طریقہ - پختون جرگہ کی تفہیم' کے شریک مصنف بھی ہیں۔ جناب یوسف زئی پاکستان پیٹرولیم لمیٹڈ (پی پی ایل)، آئل اینڈ گیس ڈیولپمنٹ کارپوریشن لمیٹڈ (او جی ڈی سی ایل)، پاکستان اسٹیٹ آئل کمپنی لمیٹڈ (پی ایس او سی ایل) اور ماڑی پیٹرولیم کمپنی لمیٹڈ (ایم پی سی ایل) کے ڈائریکٹر ہیں۔

جناب محمد رمضان

ڈائریکٹر

Profile-Image

جناب صالح احمد فاروقی

ڈائریکٹر

جناب محمد صالح احمد فاروقی پاکستان ایڈمنسٹریٹو سروس سے تعلق رکھتے ہیں۔ آپ نے ؁۱۹۹۰ میں سول سروس میں شمولیت اختیار کی۔ بطور سیکرٹری کامرس تعیناتی سے قبل آپ سیکرٹری ٹریڈ ڈیولپمنٹ اتھارٹی آف پاکستان اور سندھ انفراسٹرکچر ڈیولپمنٹ کمپنی کے چیف ایگزیکٹو آفیسر تعینات رہے۔ اس کے علاوہ آپ وفاقی، صوبائی اور ضلعی انتظامیہ میں مختلف عہدوں پر تعینات رہے۔
آپ نے لندن سکول آف اکنامکس سے ماسٹرز کی ڈگری حاصل کی۔ آپ برطانوی شیوننگ سکالر اور پائیدار ترقی کے سرکردہ بین الاقوامی معاون ہیں۔ اس کے علاوہ آپ مختلف درجوں پر اقتصادی، مالیاتی اور بنیادی ڈھانچے سے متعلق اصلاحاتی اقدامات کا حصہ رہے ہیں اور مختلف بین الاقوامی فورمز پر پاکستان کی نمائندگی کر چکے ہیں۔

Profile-Image

عثمان سیف اللہ خان

ڈائریکٹر

جناب عثمان خان اس وقت سیف گروپ کے وائس چیئرمین کی حیثیت سے خدمات انجام دے رہے ہیں جو ایک متنوع صنعتی اور خدمات فراہم کرنے والا گروپ ہے جس کا صدر دفتر اسلام آباد میں ہے۔ جناب عثمان خان نے 1995 میں سیف گروپ میں شمولیت اختیار کی اور اس وقت سے گروپ کے ساتھ مختلف اسٹریٹجک اور آپریٹنگ کردار ادا کیے۔ وہ گروپ کی ہولڈنگ کمپنی سیف ہولڈنگ لمیٹڈ کے چیئرمین کے ساتھ ساتھ گروپ کے ٹیکسٹائل مینوفیکچرنگ کاروبار کے چیئرمین کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دے رہے ہیں۔ عثمان خان اس سے قبل اسکائی الیکٹرک پرائیویٹ لمیٹڈ کے چیف ایگزیکٹو آفیسر تھے، جو پاکستان کی سب سے تیزی سے بڑھتی ہوئی سولر کمپنی ہے، اور اس وقت کمپنی کے بورڈ آف ڈائریکٹرز میں خدمات انجام دے رہے ہیں۔ مسٹر خان مختلف انڈسٹری ایڈووکیسی پلیٹ فارمز سے وابستہ ہیں اور پاکستان بزنس کونسل (پی بی سی) کے رکن ہیں۔ انہوں نے منصوبہ بندی کمیشن آف پاکستان کی مشاورتی کمیٹی، سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان (ایس ای سی پی) کے پالیسی بورڈ کے رکن اور غلام اسحاق خان انسٹی ٹیوٹ آف انجینئرنگ سائنسز (جی آئی کے) کی گورننگ باڈی کے رکن کے طور پر خدمات انجام دیں ہیں۔ عثمان سیف اللہ خان مارچ 2012 میں چھ سال کی مدت کے لئے سینیٹ آف پاکستان کے لئے بلا مقابلہ منتخب ہوئے اور وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کی نمائندگی کی۔ وہ سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے سائنس و ٹیکنالوجی کے چیئرمین اور سینیٹ کی خصوصی کمیٹی برائے چین پاکستان اقتصادی راہداری (سی پیک) کے رکن بھی رہے۔ انہوں نے سینیٹ کی تین دیگر کمیٹیوں میں بھی خدمات انجام دیں: (1) فنانس (2) انفارمیشن ٹیکنالوجی اور ٹیلی کمیونیکیشن اور (3) قوانین اور استحقاق۔ سینیٹر عثمان خان 7 مارچ کو سینیٹ کی جانب سے منظور کیے گئے ڈومیسٹک ورکرز (ایمپلائمنٹ رائٹس) بل 2015 کے حامی تھے۔ سینیٹ میں ان کی مدت مارچ 2018 میں ختم ہوئی۔ عثمان خان نے آکسفورڈ یونیورسٹی (1995) کے کرائسٹ چرچ سے انجینئرنگ، اکنامکس اور مینجمنٹ میں ماسٹر ڈگری حاصل کی، جہاں وہ برٹانیہ اسکالر تھے اور گریجویٹ اسکول آف بزنس، اسٹینفورڈ یونیورسٹی (2009) سے بزنس ایڈمنسٹریشن (ایم بی اے) میں ماسٹرز کی ڈگری حاصل کی۔

Profile-Image

سردار سعادت علی خان

ڈائریکٹر

سعادت علی خان سوئی ناردرن گیس پائپ لائنز لمیٹڈ (ایس این جی پی ایل) میں 36 سال سے زائد عرصے تک خدمات انجام دے چکے ہیں، انہوں نے اپنے کیریئر کے دوران مختلف عہدوں پر خدمات انجام دیں۔ تنظیم میں آغاز کرنے کے بعد ، انہوں نے اپنی مہارت کا عملی مظاہرہ کیا ، جس کی وجہ سے آپ کلیدی قائدانہ عہدوں پر فايز رہے۔
ایس این جی پی ایل میں، آپ قائم مقام جنرل منیجر (ایڈمنسٹریشن) کے عہدے پر فائز تھے ، انہوں نے کمپنی کے اندر کاموں کو موثر طریقے سے منظم کیا۔ جنرل منیجر (ریٹیل سیلز) کی حیثیت سے اپنی مدت کے دوران ، انہوں نے فروخت کی حکمت عملی ، صارفین سے تعلقات اور مجموعی آپریشنل کارکردگی کو بڑھانے میں اہم کردار ادا کیا۔
آخر کار ، وہ اکتوبر 2010 میں جنرل منیجر (ایچ آر) کے طور پر ریٹائر ہوئے ، اور تنظیم کے اندر کامیاب انسانی وسائل کے انتظام کی وراثت چھوڑ گئے۔ اپنے کیریئر کے دوران ، انہوں نے تنظیمی کامیابی کو آگے بڑھانے کے لئے مثبت کام کی ثقافت، ملازمین کی ترقی ، اور ٹیلنٹ کے حصول کو فروغ دینے کی اہمیت کی گہری تفہیم کا مظاہرہ کیا۔
سعادت علی خان نے پانچ سال تک ایس این جی پی ایل کرکٹ ٹیم کے چیف منیجر کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دیں۔

Profile-Image

جناب طارق اقبال خان

ڈائریکٹر

جناب طارق اقبال خان انسٹی ٹیوٹ آف چارٹرڈ اکاؤنٹنٹس آف پاکستان کے فیلو ممبر ہیں جو 40 سال سے زائد کا متنوع تجربہ رکھتے ہیں۔ انہوں نے اسلام آباد اسٹاک ایکسچینج کے قیام میں اہم کردار ادا کیا جہاں انہوں نے بعد میں صدر کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دیں۔ انہوں نے سینٹرل بورڈ آف ریونیو میں ممبر ٹیکس پالیسی اینڈ کوآرڈینیشن کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دیں ، اس کے بعد کمشنر ایس ای سی پی مقرر ہوئے ، جہاں انہوں نے ایس ای سی پی کی تنظیم نو میں اہم کردار ادا کیا۔ انہوں نے مختصر مدت کے لئے چیئرمین ایس ای سی پی (قائم مقام) کا چارج بھی سنبھالا۔ انہوں نے قومی سطح کی اہم کمیٹیوں جیسے ٹیک اوور قانون کی تشکیل کی کمیٹی، سیکورٹیز اینڈ ایکسچینج آرڈیننس 1969 کے جائزہ کے لئے سی ایل اے کمیٹی، سی ڈی سی قانون و ضوابط کی تشکیل کے لئے کمیٹی اور اسٹاک مارکیٹ کی بحالی کے لئے وزیر اعظم کی کمیٹی میں خدمات انجام دیں۔ انہوں نے 8 سال سے زائد عرصے تک این آئی ٹی کے چیئرمین اور ایم ڈی کی حیثیت سے خدمات انجام دیں ، جہاں انہوں نے کیپٹل مارکیٹوں کے قیام اور استحکام میں محرک کا کردار ادا کیا۔ مزید برآں، اس مدت کے دوران، انہوں نے تقریبا 5 سال تک آئی سی پی کے چیئرمین اور ایم ڈی کا چارج سنبھالا۔ انہوں نے سی ڈی سی، فیصل بینک لمیٹڈ، بینک الحبیب لمیٹڈ، جی ایس کے، آئی سی آئی، سیمنز اینڈ پیکجز وغیرہ جیسی بڑی کمپنیوں کے بورڈز میں خدمات انجام دیں۔ وہ اٹک ریفائنری لمیٹڈ، سوئی ناردرن گیس پائپ لائنز لمیٹڈ، کے پی انرجی بورڈ اور کے پی او جی سی ایل کے چیئرمین رہ چکے ہیں۔ فی الوقت وہ نیشنل ریفائنری لمیٹڈ، پیکیجز لمیٹڈ، سلک بینک لمیٹڈ، انٹرلوپ لمیٹڈ اور پاکستان آئل فیلڈز لمیٹڈ کے بورڈز کے ممبر ہیں۔ آپ پیکیجڈ کنورٹرز لمیٹڈ اور آڈٹ اوورسائٹ بورڈ کے چیئرمین کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دے رہے ہیں۔